سرمایہ کاری کے DAOs کیا ہیں؟
امواد کا جدول
تعارف
سرمایہ کاری کا DAO کیا ہوتا ہے؟
DAO کیا ہوتا ہے؟
سرمایہ کاری کے DAOs کس طرح کام کرتے ہیں؟
سرمایہ کاری کا DAO فنڈز کیسے حاصل کرتا ہے؟
کیا سرمایہ کاری کے DAOs کی قانونی حیثیت ہے؟
سرمایہ کاری کے DAOs کے ساتھ کون سے خطرات موجود ہوتے ہیں
روایتی VCs بمقابلہ سرمایہ کاری کے DAOs
اختتامی خیالات
سرمایہ کاری کے DAOs کیا ہیں؟
ہوم
آرٹیکلز
سرمایہ کاری کے DAOs کیا ہیں؟

سرمایہ کاری کے DAOs کیا ہیں؟

جدید
شائع کردہ Jul 5, 2022اپڈیٹ کردہ Nov 18, 2022
7m

TL؛DR

سرمایہ کاری کا DAO، ایک ایسی غیر مرکزی تنظیم ہے، جو فنڈز کی صورت میں گروپ سرمایہ کاری کرتی ہے۔ سرمایہ کاری DAO کے گورننس ٹوکن کی ملکیت رکھنے والا کوئی بھی فرد، فیصلہ سازی کے عمل میں شمولیت اختیار کر سکتا ہے۔ آپ جتنے زیادہ ٹوکن ہولڈ کریں گے، اتنی ہی زیادہ آپ کی ووٹ کرنے کی طاقت ہو گی۔ سرمایہ کاری کے DAOs ٹوکن سیلز، NFTs کے اجراء، اور منافع کمانے والی سروسز کے ذریعے اپنے خزانے میں فنڈ جمع کرواتے ہیں۔ آپ کی عملداری کے قوانین کے مطابق سرمایہ کاری کے DAOs قانونی حیثیت برقرار رکھیں گے۔

تعارف

بلاک چین نے اپنی غیر مرکزی اہلیتوں کے ہمراہ سرمایہ کاری کو مستقل طور پر تبدیل کر دیا ہے۔ کاروباری افراد اور اسٹارٹ اپس کو وینچر کیپیٹل فرمز، سیڈ راؤنڈز، اور فنڈ جمع کرنے والے روایتی ماڈلز پر مزید بھروسہ کرنا درکار نہیں ہے۔ اپنے پراجیکٹ ٹوکن فروخت کرنے کے لیے ذاتی ٹوکن تخلیق کرنا اور آن چین کے متعدد طریقوں میں سے کسی ایک کا استعمال کرنا نسبتاً آسان ہے۔ 

ایسسی نمایاں تبدیلی صرف فنڈ جمع کرنے والے افراد کے ساتھ ہی پیش نہیں آئی ہے: سرمایہ کاروں کے ساتھ بھی ایسا ہوا ہے۔ ہمارے پاس اب سرمایہ کاری کے DAOs کے ساتھ، چھوٹے سرمایہ کاروں کے لیے قابل رسائی فنڈنگ کے پراجیکٹس کے لیے نئی حکمت عملی موجود ہے۔

سرمایہ کاری کا DAO کیا ہوتا ہے؟

سرمایہ کاری کا DAO، اپنے صارفین کو فنڈز کب اور کہاں سرمایہ کاری میں صرف کرنے کی اجازت دیتا ہے۔ DAO کی جانب سے سرمایہ کاری کے لیے منتخب کیے جانے والے کسی بھی اثاثے، ریئل اسٹیٹ، یا DeFi کے سرمایہ کاری کے کسی دوسرے ذرائع میں ایسا ہو سکتا ہے۔ سرمایہ کاری کا DAO، سرمایہ کاری کے سارے عمل کو معمول پر لانے اور غیر مرکزی کرنے کے لیے غیر مرکزی و خود مختار تنظیم (DAO) ماڈل کا استعمال کرتا ہے۔ 

روایتی ماڈلز، سرمایہ کاری کی اہلیت VC فنڈز اور خاندانی دفاتر، اور ہیج فنڈز کے رقم کی نظم کاری کرنے والے افراد کو منتقل کرتا ہے۔ اس کے متبادل کے طور پر، سرمایہ کاری کے DAOs، اپنے گورننس ٹوکن ہولڈ کرنے والے کسی بھی فرد کو اپنی سرمایہ کاری سے متعلق فیصلے کرنے کی اہلیت کی پیشکش کرتے ہیں۔ یہ ماڈل سرمایہ کاری سے متعلق فیصلے کرنے کے لیے، کم افراد کی صلاحیتوں کو بروئے کار لانے کی بجائے، کثیر افراد کی ذہانت کو ترجیح دیتا ہے۔

DAO کیا ہوتا ہے؟

غیر مرکزی و خود مختار تنظیم (DAO) ایک ایسی تنظیم ہے، جس کی نظم کاری اسمارٹ معاہدہ جات، بلاک چین پر چلنے والے کوڈ کے از خود عمل میں آنے والے حصوں کی جانب سے کی جاتی ہے۔ DAO ممبرز پھر دانستہ طور پر ایسے فیصلے کرتے ہیں، جن پر اسمارٹ معاہدہ جات کے ذریعے عمل درآمد کیا جاتا ہے۔ درحقیقت، کوئی بھی DAO انسانی مداخلت کے بناء فنکشن اور مسلسل چل سکتا ہے۔ حتیٰ کہ DAO ممبران کی جانب سے دلچسپی کھونے یا پراجیکٹ چھوڑنے کی صورت میں، DAO کا فریم ورک اپنی غیر متغیر فطرت کے باعث کام کر سکتا ہے۔

DAOs کی جانب سے فیصلے کرنے کا سب سے عمومی طریقہ، گورننس ٹوکنز پر مشتمل ووٹنگ کے میکانزمز ہیں۔ جتنے زیادہ گورننس ٹوکنز آپ کی ملکیت میں ہوتے ہیں، آپ اتنی ہی زیادہ ووٹنگ کی طاقت کے حامل ہوتے ہیں۔ چند DAOs کی جانب سے تجویز دینے کا اختیار کسی بھی ممبر کے پاس ہوتا ہے، جبکہ چند کی جانب سے یہ حق مخصوص گروپ تک محدود کر دیا جاتا ہے۔ کرپٹو کی دنیا میں عمومی طور پر DAOs کو DeFi (غیر مرکزی فنانس) پراجیکٹس، بلاک چینز، یا دیگر پروٹوکولز کی نظم کاری کرنے کے لیے استعمال میں لایا جاتا ہے۔

سرمایہ کاری کے DAOs کس طرح کام کرتے ہیں؟

سرمایہ کاری کا DAO، عمومی طور پر کسی ہدف یا مقصد کے تحت کام کرتا ہے۔ بعض افراد کی جانب سے انڈسٹری کے مخصوص حصوں جیسا کہ GameFi یا DeFi پروٹوکول میں سرمایہ کاری کی جاتی ہے۔ تجویز پر مبنی میکانزم کا استعمال کرتے ہوئے ان اصولوں کے مطابق سرمایہ کاری کے فیصلے کیے جاتے ہیں۔

سرمایہ کاری DAO کے گورننس ٹوکن کی ملکیت رکھنے والا کوئی بھی فرد، تجویز دینے کی اہلیت رکھتا ہے۔ کچھ DAOs اسے ٹوکن کی مخصوص مقدار کے ہولڈرز یا گروپ کے کسی ذیلی سیکشن تک محدود کر دیں گے۔ ایسا دھوکہ بازی روکنے یا صرف کافی اسٹیک کے حامل ممبرز کو سرمایہ کاری کے فیصلے تجویز کرنے کے لیے کیا جا سکتا ہے۔

ایک بار تجویز تیار کرنے پر، صارفین ووٹنگ کے اپنے حقوق استعمال کرنے کے لیے آیا اپنے ٹوکنز اسٹیک کریں گے یا اسنیپ شاٹ میکانزم کا استعمال کریں گے۔ Snapshot ہر والیٹ میں گورننس ٹوکنز کی تعداد دیکھتا ہے اور ٹوکنز لاک کیے بناء ہی ووٹنگ کرنے کے حقوق تقسیم کرتا ہے۔ صارفین کی جانب سے ایک بار تجویز دیکھ لینے پر زائد ٹوکنز خریدنے سے، ووٹ پر اثرات کم کرنے کے لیے اس کے ذریعے معاونت ملتی ہے۔ ایک بار ووٹنگ کے مکمل ہونے پر، نتائج کے مطابق فیصلے پر عمل درآمد کروایا جاتا ہے۔

سرمایہ کاری سے حاصل ہونے والے منافع جات کو گورننس ٹوکن ہولڈرز کو آیا ایئر ڈراپس یا اسٹیکنگ میکانزم کے ذریعے تقسیم کیا جاتا ہے۔ آپ کے گورننس ٹوکن اسٹیک کرنے سے، آپ انعامات کا اپنا شیئر وصول کریں گے جس آپ اسمارٹ معاہدہ جات سے حاصل کریں گے۔  

سرمایہ کاری کے DAOs اکثر اوقات اپنی تجویز کو منظم کرنے، باخبر رکھنے، اور ان کی سہولت کاری میں معاونت کرنے کے لیے Discord اور Telegram پر کمیونٹی کے فعال چینلز چلاتے ہیں۔ کوئی بھی DAO اپنی کمیونٹی کے جتنا کامیاب ہوتا ہے، لہٰذا اسے بہتر اور فعال ممبرشپ درکار ہوتی ہے۔

سرمایہ کاری کا DAO فنڈز کیسے حاصل کرتا ہے؟

سرمایہ کاری کا DAO اپنا خزانہ کئی طریقوں سے تیار کر سکتا ہے۔ سب سے عمومی طریقہ کار گورننس ٹوکن کی سیل ہے۔ کوئی نیا DAO سیل کے میسر میکانزمز کے ذریعے اپنے ٹوکن منٹ کرتے ہوئے مارکیٹ میں ان کی پیشکش کرے گا۔ سرمایہ کاروں کی جانب سے انہیں فرضی مقاصد، ووٹنگ کے حقوق، یا دونوں کے لیے خریدا جا سکتا ہے۔ 

تجربہ کار سرمایہ کاروں کی جانب سے تیار کیا گیا مضبوط حکمت عملی کا حامل DAO کا سیٹ اپ، DAO کے ممکنہ ممبرز کی کمیونٹی کی توجہ اپنی جانب مبذول کروائے گا۔ ان کے گورننس ٹوکن کو Bitcoin (BTC)، Ether (ETH)، BUSD، یا دیگر اسٹیبل کوائن کے جیسی کرپٹو کرنسی کے لیے فروخت کرنے پر، DAO پھر اپنے خزانے میں فنڈز رکھے گا۔ وہ مستقبل میں ہونے والی سیلز کے لیے، کچھ گورننس ٹوکنز اپنے خزانے میں رکھ سکتے ہیں۔

نان فنجیبل ٹوکنز، یا NFTs کا اجراء یا سیل، ایک اور مشہور طریقہ ہے۔ یہ مکمل طور پر قابل جمع ہوتے ہیں یا کوئی دیگر سہولت کی پیشکش کر سکتے ہیں۔ مثلاً، گورننس کے اضافی حقوق فراہم کرنے والے NFT کا اجراء کیا جا سکتا ہے۔

سرمایہ کاری کے چند DAOs کے پاس پہلے سے خزانے میں فنڈز اور پچھلی کامیابیوں سے ملنے والے ڈیجیٹل اثاثہ جات موجود ہوتے ہیں۔ مثلاً، کسی DeFi پراجیکٹ کے پاس پہلے سے اپنی پیش کردہ سروسز کی وجہ سے منافع موجود ہوتا ہے۔ پھر رقم کی سرمایہ کاری کرنے کا فیصلہ اس کا DAO کر سکتا ہے۔ تاہم، سرمایہ کاری کے DAOs کی بات کرنے پر، ہم عمومی طور پر صرف سرمایہ کاری کے ساتھ منسلک کا تذکرہ کرتے ہیں۔

کیا سرمایہ کاری کے DAOs کی قانونی حیثیت ہے؟

یہاں پر جواب کا انحصار آپ کے دائرہ اختیار میں ہے۔ آپ یہ بھی جان سکتے ہیں کہ، سرمایہ کے DAOs کی بات آنے پر، کوئی خاص شرائط موجود نہیں ہوتی، جس سے ان کے اسٹیٹس کا تعین کرنا مشکل ہو جاتا ہے۔ محض ایک تصور پانے کے لیے، آپ کی جانب سے سرمایہ کاری کے DAOs کے ٹوکن کی موزوں نظم کاری پر نظر ڈالنا ضروری ہے۔ بِالِامکان، آپ کے ملک میں اس کی سیکورٹی کے طور پر درجہ بندی کی جا سکتی ہے اور مخصوص لائسنسنگ کی ضرورت ہوتی ہے۔ اس کا شمار کرپٹو کی دیگر شرائط میں بھی کیا جا سکتا ہے۔

کسی مجموعے کے طور پر ایک ساتھ سرمایہ کاری کرنے کا تصور نیا نہیں ہے، اور متعدد ممالک کے پاس سرمایہ کاری کے کلبز کے لیے پہلے سے شرائط موجود ہیں۔ مثلاً، IRS کے پاس ان گروپس کے لیے مخصوص شرائط موجود ہیں، جو نفع شیئر کرنے کی غرض سے ایک ساتھ سرمایہ کاری کرتے ہیں۔ آیا سرمایہ کاری کے DAO کی ضابطہ کاری ہونے یا نہ ہونے کی صورت میں، آپ کے مقامی ضابطہ کار کے ساتھ ایسا کرنا چاہیئے۔

سرمایہ کاری کے DAOs کے ساتھ کون سے خطرات موجود ہوتے ہیں

جیسا کہ سرمایہ کاری کے DAOs، طاقت کو کامیابی سے ٹوکن کی ملکیت کے مطابق منتقل کرتے ہیں، خطرات پھر بھی موجود ہوتے ہیں۔ یہ بات نظر انداز نہ کریں کہ، کسی بھی کرپٹو کرنسی کو ہولڈ کرنے کے ساتھ خطرات موجود ہوتے ہیں، اور سرمایہ کاری کے DAOs کے ساتھ بھی منسلک خطرات موجود ہوتے ہیں:

1. اسمارٹ معاہدہ جات میں ناکامی - DAO چلانے والے اسمارٹ معاہدہ جات، ہیک، ناجائز فوائد، یا غلط کوڈ کے باعث ناکام ہو سکتے ہیں۔ اس عمل سے DAO کے فنڈز موثر انداز سے چلانے اور نظم کاری کرنے کے لیے درکار میکانزمز میں خلل لا سکتا ہے۔

2. سرمایہ کاری کے غلط فیصلے - سرمایہ کاری کا DAO، منفی ROI (سرمایہ کاری پر نفع)فراہم کرنے والے پراجیکٹس میں سرمایہ کاری کر سکتا ہے۔ کیونکہ، اکثریت کی جانب سے لیے جانے والے فیصلے ہمیشہ بہترین ہونے کی کوئی ضمانت نہیں ہوتی۔

3. فنڈ کی بدنظمی - سرمایہ کاری کے DAOs کی جانب سے ان کے خزانے کی مناسب دیکھ بھال ضروری ہے۔ اپنے پورٹ فولیو کو متنوع نہ بنانے یا بہتر نظم کاری نہ کرنے کی صورت میں، DAO کے سرمایہ کاری کے فنڈز کو زیادہ خطرہ لاحق ہو سکتا ہے۔ 

روایتی VCs بمقابلہ سرمایہ کاری کے DAOs

VCs کا سرمایہ کاری کے DAOs سے آمنے سامنے موازنہ کرنے پر، متعدد اقسام کے فوائد اور نقصانات ہوتے ہیں۔ جیسا کہ سرمایہ کے DAO نے روایتی طور پر غیر فعال انڈسٹری کی شروعات کی ہیں، اس کا "گرے" اسٹیٹس سرمایہ کاروں اور فنڈز اکٹھے کرنے والے پراجیکٹس کے لیے، ایک ساتھ کام کرنا مشکل بناتا ہے۔ روایتی سرمایہ کاری کی انتہائی سخت شرائط کے باعث، زیادہ تر سرمایہ کاری کے DAOs عملی طور پر صرف کرپٹو کے دیگر پراجیکٹس کے ساتھ کام کرنے کے قابل ہوں گے۔

تاہم، Web3 کی بات آنے پر، سرمایہ کاری کے DAOs کے چند نمایاں فوائد ہیں۔ VC کی روایتی فرمز نے Web3 کی اہلیت میں خاصی دلچسپی کا اظہار کیا ہے، لیکن عمومی طور پر اپنی سرمایہ کاری اور صلاحیتوں کے عوض کافی ازالے کا مطالبہ کرتی ہیں۔ لیکن Web3 اور بلاک چین ٹیکنالوجی کی بات آنے پر، VCs اپنے غیر مرکزی فریقوں کی جتنی معلومات نہیں رکھتے۔ اس لیے، سرمایہ کاری کے DAO کی جانب سے کی جانے والی فنڈنگ وہی اصول، جمع کردہ صلاحیتیں، اور ایک بہتر منصفانہ ڈیل فراہم کر سکتی ہیں۔

مزید روایتی انڈسٹریز کے لیے، VC قدر میں کافی زیادہ اضافہ کر سکتا ہے۔ ان فرمز کے پاس اکثر اوقات تیار کردہ نیٹ ورکس اور معاونتی سروسز کی رینج موجود ہوتی ہے۔ اس کے علاوہ، ان کے پاس ذہنی ہم آہنگی کے لیے درکار قانونی اور انضباطی مدد بھی موجود ہوتی ہے۔

اختتامی خیالات

سرمایہ کاری کے DAOs، 2020/2021 میں رونما ہونے والے کرپٹو کی آخری ترقی کے بعد سے مشہور ہیں۔ پرانے VC ماڈل میں خلل ڈالنے کا خیال چھوٹے سرمایہ کاروں اور بلاک چین فینز کے لیے اہم ہو سکتا ہے۔ ہماری جانب سے ابھی یہ سمجھنا باقی ہے کہ، اس تصور کے نئے ہونے کے باعث پلیئرز کی دو اقسام کے مابین تعلقات کس طرح آگے بڑھتے ہیں۔ سرمایہ کاری کے DAOs کے ساتھ تجربہ کرنے کا فیصلہ کرنے پر، خطرات اور اپنی پورٹ فولیو حکمت عملی کے ساتھ اس کی مطابقت کو مکمل طور پر سمجھیں۔