TradingView کے لیے نو آموز کی رہنمائی
امواد کا جدول
تعارف
TradingView کیا کرتا ہے؟
Binance میں TradingView
TradingView کس حد تک مہنگا ہے؟
TradingView کا سوشل نیٹ ورک کیا ہوتا ہے؟
TradingView کی UI کو سمجھنا
اپنے TradingView کے چارٹس کو شخصی بنانا
رجحانی لائنز کھینچنا
پچ فورک کو بنانا
TradingView کے مثبت اور منفی پہلو
اختتامی خیالات
ہوم
آرٹیکلز
TradingView کے لیے نو آموز کی رہنمائی

TradingView کے لیے نو آموز کی رہنمائی

نو آموز
شائع کردہ Jun 4, 2021اپڈیٹ کردہ Nov 11, 2022
11m

TL؛DR

TradingView کرپٹو کرنسیز اور دیگر مالیاتی اثاثہ جات کے لیے براؤزر پر مشتمل چارٹنگ کا پلیٹ فارم اور اسکرینر ہے۔ اس کے چارٹنگ کے ٹولز، Binance ٹریڈنگ کی UI میں مقامی طور پر استعمال کے لیے بھی دستیاب ہیں۔ چارٹنگ کے علاوہ، آپ اپنی ٹریڈنگ کی حکمت عملیوں کو شیئر اور اپنے تجزیے کو لائیو اسٹریم بھی کر سکتے ہیں۔

مفت آپشنز کی بات آنے پر، TradingView تجربے کی تمام سطحوں کے لیے ایک طاقت ور ٹول ہے۔ زیادہ تر ٹریڈرز کے لیے اس کے بنیادی فیچرز کافی ہونے چاہئیں۔ تاہم، دیگر صارفین کے خیالات اور اسٹریمز کے ذریعے براؤز کرتے ہوئے احتیاط برتیں۔ اندھا دھند دوسروں کی تقلید کی بجائے، ایسی معلومات کو فلٹر کرنا ضروری ہے جو آپ کی حکمت عملی کو قابل قدر بنائے۔


تعارف

تکنیکی تجزیے کا شوق رکھنے والے ٹریڈرز کے لیے، چارٹنگ کے مضبوط ٹولز نہایت اہم ہیں۔ TradingView نوآموز اور تجربہ کار ٹریڈرز، دونوں کے لیے موجود ایک آپشن ہے۔ یہ ٹریڈنگ اور چارٹنگ کے بہت سے آپشنز کے علاوہ مفت ممبرشپ کے آپشن کی پیشکش بھی کرتا ہے۔ یہ تو آپ کو ماننا ہو گا۔۔۔ کہ نہ تو ہر کسی کو Bloomberg ٹرمینل کی سبسکرپشن کی ضرورت ہوتی ہے، اور نہ ہی ہر کسی کے پاس اس کے لیے درکار رقم موجود ہوتی ہے۔

اگر آپ Binance پر ٹریڈنگ کرتے آ رہے ہیں، تو آپ نے اب تک ایکسچینج پر میسر TradingView کے ٹولز دیکھ ہی لیے ہوں گے۔ لیکن انہیں جانے بغیر، بظاہر یہ تھوڑے پیچیدہ معلوم ہو سکتے ہیں۔ آزمانے کے لیے بہت کچھ موجود ہے، لیکن شروعات کہاں سے کی جائے؟ TradingView پر پیش کردہ خدمات کے بارے میں جاننے کے لیے ہمارا نو آموز کا ہدایت نامے ملاحظہ کریں۔


جو کچھ آپ نے سیکھا ہے، اسے عمل میں لانا چاہتے ہیں؟


TradingView کیا کرتا ہے؟

TradingView آپ کو تکنیکی اشاروں کو اپنے مطابق بنانے، چارٹس تخلیق کرنے، اور مالیاتی اثاثہ جات کا تجزیہ کرنے کی اجازت دیتا ہے۔ یہ اشارے، لاکھوں کی تعداد میں موجود ٹریڈرز کی جانب سے ہر روز استعمال کیے جانے والے پیٹرنز، لائنز، اور اشکال ہوتی ہیں۔ TradingView مکمل طور پر براؤزر پر مبنی ہے، جہاں صارف کو اسے ڈاؤن لوڈ کرنے کی ضرورت نہیں پڑتی۔ اگر آپ موبائل پر اس تجربے کو ترجیح دیتے ہیں، تو آپ iOS اور Android کے لیے اس کی ایپ بھی ڈاؤن لوڈ کر سکتے ہیں۔

TradingView کا آغاز 2011 میں ویسٹر ویل، اوہائیو میں کیا گیا اور صرف 2020 میں تخلیق کردہ آٹھ ملین اکاؤنٹس کے ساتھ، یہ صارفین کی ایک کثیر تعداد پر مشتمل ہے۔ صارفین آیا مفت میں یا پھر ادائیگی کے اکاؤنٹ کے ساتھ کئی اسٹاکس، اشیاء، اور کرپٹو کرنسیز جیسا کہ Bitcoin کو چارٹ اور ان کا تجزیہ کر سکتے ہیں۔ ایک بار آپ حکمت عملیاں اور ٹمپلیٹس تخلیق کر لیں، تو آپ کمیونٹی کے لیے بھی اپنی تحقیقات کو شائع کر سکتے ہیں۔ اس طریقے سے، آپ TradingView کے دیگر ممبرز کی جانب سے دیے گئے فیڈ بیک کے ساتھ اپنی مہارتوں میں بہتری لا سکتے ہیں۔


Binance میں TradingView

Binance کے ایکسچینج UI میں TradingView کے بلٹ ان ٹولز موجود ہیں، جو صارفین کو بیک وقت چارٹس تخلیق کرنے اور ٹریڈ کرنے کی اجازت دیتے ہیں۔ آپ کو بائیں جانب جو ٹولز دکھائی دے رہے ہیں، وہ TradingView کی ویب سائٹ پر یکساں تجربے کی فراہمی کی پیشکش کرنے والی اور میسر ہونے والی اشیاء کا ایک مختصر انتخاب ہے۔

انٹرفیس کی فوری جھلک دیکھنے کے لیے، Binance ویب کا TradingView ٹول کیسے استعمال کیا جائے ملاحظہ کریں۔ 

tradingview-رہنمائی-img1


TradingView کس حد تک مہنگا ہے؟

جیسا کہ ہم بیان کر چکے ہیں، TradingView ہر کسی کے لیے مفت استعمال کے لیے دستیاب ہے۔ یہاں پر ایسی ادائیگی شدہ سبسکرپشنز بھی موجود ہیں، جو ایسے اشاروں اور چارٹس کی تعداد میں اضافہ کرتی ہیں جنہیں آپ بیک وقت دیکھ سکتے ہیں۔ نوآموز افراد کے لیے، ایک چارٹ اور تین اشاروں کا حامل مفت اکاؤنٹ شروعات کے لیے ایک بہتر مقام ہے۔ آپ کو اشتہارات کا سامنا بھی رہے گا، تاہم، یہ زیادہ مخل نہیں ہوں گے۔ ذیل میں آپ پیکیجز کے مابین موجود فرق کے متعلق مزید تفصیلات دیکھ سکتے ہیں:

tradingview-رہنمائی-img2


TradingView کا سوشل نیٹ ورک کیا ہوتا ہے؟

TradingView، ٹریڈ کی حکمت عملیوں کو شیئر اور ان کا اظہار کرنے کے لیے Instagram کی طرح کے فیچرز کی پیشکش کرتا ہے۔ ویب سائٹ کے خیالات اور اسٹریمز کے صفحات، آپ کو تجاویز یا فیڈ بیک کے حصول کے مواقع فراہم کرتے ہیں۔ جب آپ خیالات کے صفحے پر نیویگیٹ کریں گے، تو آپ کو دیگر صارفین کی جانب سے چارٹس، ویڈیوز، اور تبصرے دکھائی دیں گے۔ کمیونٹی کے ممبرز، مباحثوں اور چیٹ رومز میں بھی شمولیت اختیار کر سکتے ہیں۔ تاہم اس بات کو یاد رکھیں کہ کسی بھی صارف کی جانب سے خیالات کو تخلیق اور شیئر کیا جا سکتا ہے، لہٰذا محتاط رہیں۔ ہر ٹریڈر کی طرز اور حکمت عملی منفرد ہوتی ہے، لہٰذا آپ اس کو مالیاتی مشورے کی حیثیت سے نہ دیکھیں۔

tradingview-رہنمائی-img3


جیسے کہ شاید آپ اپنے پسندیدہ گیمر کی ٹوئچ اسٹریم دیکھیں، TradingView کی اسٹریمز آپ کو دیگر ٹریڈرز کی جانب سے حقیقی وقت میں تخلیق کیے جانے والے چارٹس کا مشاہدہ کرنے کی اجازت دیتی ہیں۔ یہ ایک دلچسپ اضافی فیچر ہے، لیکن اب بھی تجرباتی مرحلے سے گزر رہا ہے، جبکہ اس میں موجود مواد کی مقدار خاصی کم ہے۔


TradingView کی UI کو سمجھنا

اگر آپ نے اس سے قبل چارٹنگ کے ٹولز استعمال نہیں کیے ہیں، تو TradingView بظاہر پیچیدہ معلوم ہو سکتا ہے۔ آیئے، پہلے اس کو چند حصوں میں تقسیم کرتے ہیں۔

tradingview-رہنمائی-img4

ٹول بار 1

یہ ٹول بار چارٹ کے مقام پر براہ راست استعمال ہونے والے چارٹنگ اور ڈرائنگ کے تمام ٹولز پر مشتمل ہے۔ سادہ سی لائنز سے لے کر لانگ/شارٹ پوزیشنز تک، دریافت کرنے کے لیے بہت کچھ باقی ہے۔ آپ ہر ٹول پر دائیں کلک کر کے وسیع انتخاب بھی ملاحظہ کر سکتے ہیں۔ کچھ دیگر کی نسبت زیادہ جدید ہوتے ہیں، لیکن ڈیفالٹ فہرست میں شروعات کرنے کے لیے معقول بنیادی معلومات موجود ہوتی ہیں۔

ٹول بار 2

یہاں پر آپ کو چارٹ کی صورت کو تبدیل کرنے کے لیے آپشنز دکھائی دیں گے۔ آپ کینڈل اسٹکس، لائن گرافس، ایریا گرافس، اور مزید بہت سی چیزوں میں سے انتخاب کر سکتے ہیں۔ ڈسپلے کیے جانے والے اثاثے کو تبدیل کرنے کے لیے بائیں جانب ایک سرچ بار بھی موجود ہے۔ ایک اور قابل غور ٹول، [Indicators & Strategies] بٹن ہے، جسے متحرک اوسط جیسے پہلے سے تخلیق شدہ تجزیاتی پیٹرنز کو داخل کرنے کے لیے استعمال کیا جاتا ہے۔

ٹول بار 3

TradingView بروکریج سروس کی پیشکش نہیں کرتا، لیکن آپ ویب سائٹ کے اندر [Trading Panel] ٹیب کو استعمال میں لاتے ہوئے ٹریڈ کر سکتے ہیں۔ اگر آپ کے پاس ان کے ساتھ پہلے سے ہی ایک کھلا ہوا اکاؤنٹ موجود ہے، تو آپ کو شراکت داروں کی ایک ایسی فہرست ملے گی جن کے ساتھ آپ ایکسچینج کر سکتے ہیں۔ آپ اپنی حکمت عملیوں کی بیک ٹیسٹنگ کرنے کے لیے بھی [Strategy Tester] کے فنکشن کو استعمال میں لا سکتے ہیں۔ 

ٹول بار 4

اس سیکشن میں مرکزی طور پر TradingView کے سوشل عناصر اور خبریں شامل ہوتی ہیں۔ آپ اپنی واچ لسٹ کو اپنے مطابق بنا سکتے ہیں، دیگر صارفین کو ذاتی پیغام بھیج سکتے ہیں، خیالات اور اسٹریمز کو دریافت کر سکتے ہیں، اور ذاتی کیلنڈر تک رسائی حاصل کر سکتے ہیں۔ اگر آپ کو کسی قسم کا ڈیٹا، فہرستیں، یا معلومات درکار ہیں، تو آپ یہاں ملاحظہ کر سکتے ہیں۔

چارٹ ایریا

جب آپ اس اثاثے کو تبدیل کریں گے جسے آپ ملاحظہ کر رہے ہیں، کسی قسم کے ٹولز لو استعمال کریں گے، یا اشارے لگائیں گے، تو آپ کو یہ چارٹ کے مرکزی ایریا میں دکھائی دیں گے۔ آپ ہر اس چیز کو اپنے مطابق بنا سکتے ہیں جو آپ دیکھ رہے ہیں، جس کے بارے میں ہم اگلے سیکشن میں بات کریں گے۔


کیا ایک بار ٹریڈنگ کو آزمانے کے لیے تیار ہیں؟


اپنے TradingView کے چارٹس کو شخصی بنانا

چارٹ کے لے آؤٹ کے حوالے سے سب کی اپنی ترجیحات ہوتی ہیں۔ رنگوں، لائنز، اور محور کو اپنے مطابق بنانے سے آپ باآسانی اپنے گرافس کو پڑھ اور سمجھ سکتے ہیں۔ آپ گراف ایریا پر دایاں کلک کر کے اور [Settings...] پر کلک کر کے تمام درکار آپشنز ملاحظہ کر سکتے ہیں۔

آپ چارٹ کے بے ترتیب ہونے پر اس کو ری سیٹ کر سکتے ہیں اور [Settings...] مینو سے بذریعہ ای میل، قیمت کے انتباہ کو اپنے مطابق بنا سکتے ہیں۔

tradingview-رہنمائی-img5


آپ کی جانب سے [Settings...] کو ایک بار کلک کرنے پر آپ خود کو [Chart settings] کی ونڈو میں پائیں گے، جہاں آپ آپشنز کی ایک وسیع حد کے ساتھ تجربہ کر سکتے ہیں۔ آیئے فوراً بنیادی چیزوں کا جائزہ لیتے ہیں۔

tradingview-رہنمائی-img6


1. آپ [Symbol] کے ذریعے اپنے کینڈل اسٹک کے چارٹس کی ظاہری صورت کو تبدیل کر سکتے ہیں۔ کینڈل اسٹک پیٹرن کے ہر حصے کو، بالکل آپ کی پسند کے مطابق مختلف رنگوں سے نشان زد کیا جا سکتا ہے۔ 

2. [Status line] آپ کو چارٹ کے بالائی بائیں کونے میں پائی جانے والی معلومات، جیسا کہ OHLC (جاری، بلند، کم، اور اختتامی قیمتوں) کا ڈیٹا اور خرید اور فروخت کے بٹنز کو بدلنے کے لیے آپشنز فراہم کرتا ہے سرخ باکس کم ترین مانگی گئی قیمت (38,345.96) کو ظاہر کرتا ہے، اور نیلا باکس سب سے زائد بولی (38,345.97) کو۔ ان کے بیچ، آپ کے پاس لگائی اور مانگی گئی قیمت کا فرق (0.01) آئے گا۔

tradingview-رہنمائی-img7


3. [Scales] آپ کو دائیں جانب موجود محور میں نظر آنے والے ٹریکرز کو بدلنے کے لیے آپشنز فراہم کرتا ہے۔ مثلاً، آپ کسی دن کی زیادہ اور کم ترین قیمتوں یا بار کی اختتامی قیمت تک الٹی گنتی کو شامل کر سکتے ہیں۔

tradingview-رہنمائی-img8


4. آپ [Appearance] کے ذریعے، اپنی گرڈ لائنز، پس منظر کے رنگ، محور، اور دیگر کاسمیٹک فیچرز کو تبدیل کر سکتے ہیں۔

5. اگر آپ نے بروکر اکاؤنٹ میں لاگ ان کر لیا ہے، تو [Trading] آپ کو بصری عناصر کو اپنے مطابق بنانے کی اجازت دیتا ہے۔

6. [Events] آپ کو چارٹ ایریا پر منافع جاتی حصہ، تقسیمات، اور دیگر ایونٹس دیکھنے کا آپشن فراہم کرتا ہے۔

چارٹ ویو کو سیٹ کرنے کے ساتھ، ممکن ہے کہ آپ دیگر علامتوں یا اپنی کینڈل اسٹکس کے دورانیے کو بھی تبدیل کرنا چاہیں۔ ایسا کرنے کے لیے، بالائی بار میں جائیں اور بالکل بائیں جانب موجود بٹن پر کلک کریں۔ اب آپ کو سیکنڈز سے مہینوں کی حد پر مشتمل، مختلف دورانیوں کی ایک طویل فہرست دکھائی دے گی۔ آپ چند دورانیوں کے لیے پسندیدگی کا اظہار بھی کر سکتے ہیں، تاکہ یہ آپ کے بالائی بار میں دکھائی دیں۔

tradingview-رہنمائی-img9


ایک بار آپ اپنے چارٹ کو اپنے مطابق بنانے کی شروعات کر دیں، تو اس کو دستی طریقے سے محفوظ کرنے کی ضرورت نہیں پڑتی۔ TradingView آپ کے تمام ایڈٹس کو حقیقی وقت میں محفوظ کرتا ہے، تاکہ آپ لاگ آؤٹ کر سکیں اور بعد میں واپس آ سکیں۔


رجحانی لائنز کھینچنا

اپنے پہلے چارٹ میں، آپ کے پاس رجحانی لائن میں غلطی کی گنجائش نہیں ہے۔ یہ نوآموزوں کے لیے قیمت کی حرکات کی نمائش کا دوستانہ طریقہ اور سوئنگ ٹریڈنگ اور ایک روزہ ٹریڈنگ کے لیے سب سے زائد استعمال کیے جانے والے چارٹ پیٹرنز میں سے ایک ہے۔ 

1. ٹیوٹوریل کی شروعات کرنے کے لیے، بائیں جانب موجود ٹول بار سے لائن ٹول کا انتخاب کریں۔

tradingview-رہنمائی-img10


2. ممکن ہے کہ آپ مقناطیسی ٹول کو بھی آن کرنا چاہیں۔ آپ کی لائنز OHLC کے کسی بھی قریبی پوائنٹ تک رسائی حاصل کریں گی، جو مزید بہتری کے لیے مددگار ثابت ہو گا۔

tradingview-رہنمائی-img11


3. گھٹتے رجحان کے لیے، قیمت میں کمی سے قبل، جسے سوئنگ ہائی بھی کہا جاتا ہے، ایک بلند مقامی پوائنٹ (پوائنٹ 1) سے شروعات کریں۔ اس مقام پر کلک کریں جہاں سے آپ لائن کی شروعات کرنا چاہتے ہیں اور جتنا ممکن ہو سکے، بلندیوں کو شامل کریں۔ اپنی رجحانی لائن کو مکمل کرنے لیے دوبارہ کلک کریں۔

tradingview-رہنمائی-img12

پوائنٹ 1، 2، اور 3 مزاحمتی پوائنٹس کو ظاہر کرتے ہیں۔ اپنی رجحانی لائن کو آزمانے کے لیے کم از کم 3 پوائنٹس کا ہونا ہمیشہ بہتر ثابت ہوتا ہے، جیسا کہ دو پوائنٹس ایک ہی وقت میں وقوع پذیر ہو سکتے ہیں۔ پوائنٹ 4 رجحان سے ہٹنے کی عکاسی کرتا ہے، جس کا مطلب ہے کہ رجحان کی نئی لائن بنانا بہتر ثابت ہو گا۔ 

ایک مرتبہ کوئی گھٹتا رجحان قائم ہو جانے پر، اس صورت میں فروخت ایک ممکنہ حکمت عملی ثابت ہو سکتی ہے جب قیمت آپ کی لائن سے مل جائے اور اس کو آزمائے۔ اگر آپ بڑھتے رجحان کو تشکیل کرنے کا ارادہ کرتے ہیں، تو اس بات کو یقینی بنائیں کہ آپ اپنی لائن کی شروعات، کم ترین قیمت کے ساتھ کرتے ہیں تاکہ لائن آپ کی کینڈل اسٹک کے نیچے رہے۔

اس بارے میں مزید معلومات کے لیے، براہ کرم معاونت اور مزاحمت کے بنیادی اصولوں کی تفصیلکو چیک کریں۔


پچ فورک کو بنانا

پچ فورک رجحان کی لائن کے تصور کو تشکیل کرنے والا ایک مزید جدید چارٹ ہے۔ اس تکنیکی اشارے کو بیسویں صدی کے مشہور امریکی سرمایہ کار اور تعلیم دان Alan Andrew، نے تخلیق کیا تھا۔ رجحان کی ایک سادہ لائن کی نسبت اس کو بنانا آسان ہے اور یہ مزید ادراک فراہم کرتا ہے، تو آئیے، اس کو ملاحظہ کرتے ہیں۔

1. شروعات کرنے کے لیے، لائن ٹول کے نیچے موجود پچ فورک ٹول کا انتخاب کریں۔

tradingview-رہنمائی-img13


2. ہم رجحانات کی ابتدا اور اختتام پر تین پوائنٹس کو منتخب کر کے اپنا پچ فورک تخلیق کرنے والے ہیں۔ 

3. آپ ذیل میں دی گئی مثال میں یہ دیکھ سکتے ہیں کہ ہم نے پوائنٹ 1 سے شروعات کی ہے، جہاں گھٹتا رجحان اپنی کم ترین سطح پر موجود ہے۔ پھر ہم نے پوائنٹ 2 پر کلک کیا ہے، جہاں بڑھتا رجحان بلند سطح پر ہے، اس کے بعد پوائنٹ 3 پر، جو کہ اگلے گھٹتے رجحان کی کم ترین سطح ہے۔

tradingview-رہنمائی-img14

4. یہ پوائنٹس پچ فورک کی ساخت کو تخلیق کرتے ہیں، جہاں بالائی لائن مزاحمتی سطح کی عکاسی کرتے ہوئے پوائنٹ 2 سے نکل رہی ہے اور زیریں لائن معاونتی سطح کی عکاسی کرتے ہوئے پوائنٹ 3 سے نکل رہی ہے۔ اوسط لائن اس مقام پر ہوتی ہے، جس کی جانب قیمت کے راغب ہونے کی توقع ہے۔

5. ہماری رجحانی لائن کی مثال کی طرح، معاونت کی لائن خرید کی ممکنہ جگہوں اور مزاحمت کی لائن فروخت کی ممکنہ جگہوں کو ظاہر کرتی ہے۔ آپ خطرے کی نظم کاری کے طریقہ کار کے طور پر زیریں ٹرینڈ لائن کے بالکل نیچے اسٹاپ خسارے کا آرڈر دے سکتے ہیں۔ اس بات کو نوٹ کریں کہ، دیگر کسی بھی اشارے کی طرح، پچ فورک ہمیشہ توقعات کی مطابق کام نہیں کرتا۔ خطرات کو کم کرنے کے لیے، اس کو دیگر ٹولز اور حکمت عملیوں کے ساتھ یکجا کرنے پر غور کریں۔

اگر آپ مزید جاننے کے خواہاں ہیں، تو TradingView پر TA کے اشاروں کو کس طرح سے تخلیق کیا جائے کو ملاحظہ کریں۔


TradingView کے مثبت اور منفی پہلو

اثاثے کے اسکرینرز کی بات ہو، تو TradingView بہت سے انتخابات میں سے ایک ہے۔ کئی چارٹنگ اور ٹریڈنگ کے ایک جیسے ٹولز کی پیشکش کرتے ہیں، لیکن چلیے پہلے مرکزی پہلوؤں کو دیکھتے ہیں۔ TradingView بعض چیزوں کو بہترین طریقے سے انجام دیتا ہے، لیکن پھر بھی اس میں مزید بہتری کی گنجائش موجود ہے۔

فوائد

  • HTML5 کی چارٹنگ - کوئی بھی ایسی ڈیوائس جس کے پاس انٹرنیٹ موجود ہو، وہ TradingView تک رسائی حاصل کر سکتی ہے۔ آپ پر کسی سافٹ ویئر کو انسٹال کرنا لازم نہیں ہے اور آپ کہیں بھی اپنے چارٹس کو ملاحظہ کر سکتے ہیں۔ 

  • مفت ممبرشپ - ہر کوئی دستیاب ہونے والے زیادہ تر فیچرز تک رسائی حاصل کر سکتا ہے۔

  • سروس کی جانب سے انتباہ کا سسٹم - اگر آپ کوئی انتباہ سیٹ کرتے ہیں، تو TradingView اپنے سرورز پر ان کا ٹریک رکھے گا۔ انتباہ کی اطلاعات موصول کرنے کے لیے ضروری نہیں کہ آپ TradingView کو کھلا رکھیں۔ 

  • Binance مطابقت پذیری - اگرچہ آپ TradingView کی ویب سائٹ سے Binance تک رسائی حاصل نہیں کر سکتے، تاہم آپ TradingView کو Binance ٹریڈنگ کی UI میں استعمال کر سکتے ہیں۔ Binance کے ساتھ آپ باآسانی کرپٹو کو خرید اور فروخت کر سکتے ہیں اور فلائی پر چارٹس بھی تخلیق کر سکتے ہیں۔ 

  • اسکرپٹس - زیادہ تجربہ کار صارفین TradingView کے سرورز پر محفوظ کردہ اپنی مرضی کے مطابق بنائے گئے اشارے تخلیق کر سکتے ہیں۔ اس فیچر کو پائن اسکرپٹ کی جانب سے تقویت فراہم کی جاتی ہے، جو TradingView کی حسبِ منشاء بنائی گئی کوڈنگ کی زبان ہے اور جس کو استعمال کرنا نہایت آسان ہے۔

  • اثاثے کا انتخاب - چارٹ کے لیے ایکویٹیز، سکیورٹیز، اشیاء، اور فوریکس کی معلومات، کثیر تعداد میں دستیاب ہے۔ یہاں پر ہم محض کرپٹو کرنسیز تک ہی محدود نہیں! 

  • بیک ٹیسٹنگ - ایک بار آپ کی جانب سے حکمت عملی تیار ہو جانے پر، ان بلٹ فیچر کو استعمال کرتے ہوئے بیک ٹیسٹ کرنا نہایت آسان ہے۔

نقصانات

  • کمیونٹی کے مسائل - اگرچہ اسٹریمز اور خیالات کی ٹیب کا تصور اہم ہے، تاہم آپ کو موصول ہونے والی چیز کا معیار نہایت مختلف ہو گا۔ دیے جانے والے زیادہ تر مشورے کافی حد تک اندازوں پر مبنی ہوتے ہیں اور نئے صارفین کے لیے زیادہ کارگر ثابت نہیں ہوتے۔ کبھی کبھار تبصرے کے سیکشن میں بھی اس قسم کی ٹرولنگ ہوتی رہتی ہے۔

  • صارفی معاونت - TradingView کی کمیونٹی عمومی طور پر اپنے مسائل کی رپورٹ TradingView کی صارفی معاونت کو کرتی ہے۔ صرف ادائیگی کرنے والے صارفین ہی مسائل بیان کر سکتے ہیں، اور مفت استعمال کرنے والے صارفین کو کوئی معاونت نہیں ملتی۔

  • بروکریج کا انضمام - TradingView نے چند بروکرز اور ٹریڈنگ کے پلیٹ فارمز کو ضم کیا ہے، لیکن یہ آپشنز اب تک محدود ہی ہیں۔

  • Cboe BZX کا ڈیٹا - امریکی اسٹاکس کی TradingView کی قیمتیں براہ راست ان کی منسلکہ اسٹاک مارکیٹس سے نہیں آتی ہیں۔ مثلاً، NASDAQ کے اسٹاکس، اپنی قیمت کو Cboe BZX ایکسچینج کے ذریعے حاصل کرتے ہیں، جو اصل قیمت سے تھوڑی سی الگ ہو سکتی ہے۔ کسی ایکسچینج کا حقیقی وقت کا ڈیٹا فیس کے عوض میسر ہے۔


ضروری نہیں کہ ٹریڈنگ مشکل ہی ہو


اختتامی خیالات

کسی بھی ایسے فرد کے لیے TradingView دریافت کا ایک بہترین آپشن ہے، جو استعمال کے لیے کئی ٹولز کے حامل مفت حل کا متلاشی ہے۔ ان کے تعلیمی مواد تک مفت رسائی بھی میسر ہے اور اس میں چارٹنگ اور تکنیکی اشاروں کے بنیادی پہلوؤں کو تفصیلاً بیان کیا جاتا ہے۔

تاہم، سوشل پہلو، زیادہ مضبوط نہیں ہے۔ بعض اوقات چیٹ رومز میں اندازاً مشورے دیے جاتے ہیں، جو آپ کو نظر انداز کرنے چاہئیں۔ اس عنصر کے باعث نوآموزوں کے لیے سوشل پہلوؤں کی قدر کم ہو جاتی ہے، کیونکہ آپ کو اچھے اور برے مشورے کے مابین انتخاب کرنا ہوتا ہے۔ 

پھر بھی، اپنے چارٹ ٹولز کے سبب، TradingView اس قابل ہے کہ اسے آزمایا جائے اور یہ ٹریڈنگ کی حکمت عملیوں کو بیک ٹیسٹکرنے کے لیے ایک مناسب مقام ہے۔ تکنیکی تجزیہ ایک وسیع موضوع ہے، اور آپ کے پاس محض ایک مفت اکاؤنٹ کے ساتھ ہی دریافت کرنے کے لیے بہت کچھ موجود ہو گا۔


اعلامیہ: یہاں پر پیش کردہ مواد محض تعلیمی مقاصد کے لیے ہے۔ یہ آرٹیکل کسی قسم کی تشہیر و تجویز نہیں، اور فراہم کی گئی معلومات کو مالیاتی مشورے کے طور پر نہیں لیا جانا چاہیئے۔ تمام اسکرین شاٹس کو TradingView کی آفیشل ویب سائٹ سے لیا گیا ہے اور ان کی استعمال کی شرائط کے مطابق ہیں۔