ٹوکن کے معیارات کیا ہیں؟
امواد کا جدول
تعارف
ٹوکن کے معیارات کو کیوں استعمال کرنا چاہیئے؟
کرپٹو اور DeFi میں عمومی ٹوکن معیارات
ٹوکن کے معیارات کے کمزور پہلو
اختتامی خیالات
مزید مطالعہ
ٹوکن کے معیارات کیا ہیں؟
ہوم
آرٹیکلز
ٹوکن کے معیارات کیا ہیں؟

ٹوکن کے معیارات کیا ہیں؟

جدید
شائع کردہ Jan 13, 2023اپڈیٹ کردہ Feb 1, 2023
5m

TL؛DR

ٹوکن کے معیارات ایسے قواعد و ضوابط کے سیٹس ہیں جو کرپٹو ٹوکن کے کام کرنے کا طریقہ طے کرتے ہیں۔ مقبول معیارات میں ERC-20، BEP-20، ERC-721، اور ERC-1155 شامل ہیں۔

تعارف

اگرچہ دسیوں ہزاروں کی تعداد میں کرپٹو کرنسیز موجود ہیں، لیکن آپ کو یہ جان کر حیرت ہو گی کہ ان میں سے اکثر یکساں بلیو پرنٹ کے ساتھ بنائی گئی ہیں۔ ٹوکن کے معیارات نامی یہ بلیو پرنٹس، بلاک چین ٹوکنز کے بعض کلیدی افعال اور خصوصیات متعین کرتے ہیں۔

ٹوکن کے معیارات کو کیوں استعمال کرنا چاہیئے؟

باہم عمل کی قابلیت

ٹوکن کے معیارات اس بات کو یقینی بناتے ہیں کہ اس خاص معیار کو استعمال کرتے ہوئے بنائی گئی تمام پراڈکٹس باہم مل کر تعامل یا کام کر سکتی ہیں۔ اگر کوئی پراجیکٹ ٹوکن کے معیار کے مطابق کوئی ٹوکن جاری کرتا ہے، تو یہ نیا ٹوکن پہلے سے موجود پلیٹ فارمز اور والیٹس جیسی ایپلیکیشنز کے ساتھ مطابقت پذیر رہے گا۔ مثال کے طور پر، ERC-20 اثاثے دیگر ایسی پراڈکٹس اور سروسز کے ساتھ باہمی تعامل کی صلاحیت رکھتے ہیں جو یکساں ٹوکن کا معیار استعمال کرتے ہوئے بنائی گئی ہیں۔

یہی وجہ ہے کہ آپ اپنے ERC-20 ٹوکن کو کسی دوسرے ٹوکن کے بدلے ٹریڈ کر سکتے ہیں۔ ٹوکن کے معیارات کے بغیر، متعدد کرپٹو کرنسیز کو ٹریڈ کرنا خاصا مشکل ہو گا۔ یعنی بجائے اس کے کہ آپ متعدد کرپٹو کرنسیز کو ہولڈ کرنے والے والیٹ کو استعمال کریں، آپ کو مخصوص ٹوکنز کے لیے مخصوص والیٹس بھی بنانے پڑیں گے۔

ترتیب پذیری

پروگرامنگ کے دوران ڈویلپرز ایک قابلِ ترتیب سسٹم کی وجہ سے، نئی پراڈکٹس بنانے کے لیے پہلے سے موجود اجزاء کو دوبارہ استعمال کر سکتے ہیں۔ یہی اصول ٹوکن کی تخلیق پر بھی لاگو ہوتا ہے– یعنی ٹوکن کے معیارات کو استعمال کرتے ہوئے، بنیادی فعالیت پر کم وقت صرف ہوتا ہے، اس لیے ڈویلپرز کو تجربہ کرنے اور جدت لانے کے لیے زیادہ وقت ملتا ہے۔

کارکردگی

ٹوکن کے معیارات اسمارٹ معاہدوں کے مابین تعامل میں بھی سہولت فراہم کرتے ہیں۔ جب اسمارٹ معاہدے ٹوکن کے معیارات پر عمل درآمد اور ٹوکنز کی تعیناتی کا کام کر لیتے ہیں، تو وہ تخلیق کردہ ٹوکنز کی نگرانی کے لیے بھی استعمال ہو سکتے ہیں۔

ERC-20 اور BEP-20 جیسے ٹوکن کے معیارات کلیدی فنکشنز کے ساتھ آتے ہیں، جن میں ایڈریس کی بازیافت اور ٹوکن کے بیلنسز شامل ہیں، جس کی وجہ سے اسمارٹ معاہدے ٹوکنز کی زیادہ مؤثر طریقے سے نگرانی کر سکتے ہیں۔ مثال کے طور پر، اگر ہم ERC-20 ٹوکن کا معائنہ کریں، تو ڈویلپر اس صورت میں معاہداتی ایپلیکیشن بائنری انٹرفیس (ABI) نامی ایک انٹرفیس استعمال کر سکتا ہے تاکہ ٹوکن کی ٹرانسفرز اور دیگر ڈیٹا کا سراغ لگا سکے۔

کرپٹو اور DeFi میں عمومی ٹوکن معیارات

BEP-20

BEP-20 BNB اسمارٹ چین (BSC) پر ٹوکن کا ایک معیار ہے۔ BSC کی تکنیکی خصوصیات کے ساتھ تیار کردہ یہ معیار ڈویلپرز کو مختلف قسم کے ٹوکنز شروع کرنے کا موقع دیتا ہے، جن میں پیگی کوائنز، سہولتی ٹوکنز، اسٹیبل کوائنز اور مزید شامل ہیں۔ BEP-20 معیار میں بلیک لسٹ کرنے، منٹنگ، اور ٹوکن کے ضیاع کی سرگرمیوں کو روکنے جیسے فیچرز بھی متعارف کروائی گئی ہیں۔

ذیل میں BEP-20 ٹوکن معیار کے اہم فنکشنز بیان کیے ہیں:

  1. کُل سپلائی: کسی مخصوص BEP-20 ٹوکن کی کل ٹوکن سپلائی بیان کرتی ہے۔

  2. بیلنس آف: ٹوکن کا بیلنس بیان کرتا ہے۔

  3. ٹرانسفر: صارفین کو موقع فراہم کرتا ہے کہ وہ اپنے ٹوکن کی ملکیت کسی دوسرے شخص کو ٹرانسفر کر سکیں۔

  4. ٹرانسفر منجانب: اس کے ذریعے کوئی صارف اسمارٹ معاہدے کے ذریعے کسی دوسرے شخص کی طرف سے ٹوکن کو ٹرانسفر کر سکتا ہے۔

  5. منظوری: ایک حد متعین کرتا ہے کہ ایک اسمارٹ معاہدہ کتنی تعداد میں ٹوکنز کو نکلوا سکتا ہے۔

  6. اجازت: یہ ایسے بیرونی ایڈریسز متعین کرتا ہے جنہیں ٹوکنز خرچ کرنے کی اجازت حاصل ہوتی ہے۔

ERC-20

2015 میں، Fabian Vogelsteller نے ERC-20 کی تجویز پیش کی، یہ ٹوکن کا ایسا معیار ہے جسے بعد میں ڈویلپرز اپنے ذاتی ٹوکنز ڈیزائن کرنے کے لیے ایک مرکزی خاکے کے طور پر استعمال کر سکیں گے، جس میں ورچوئل ٹوکنز، اسٹیکنگ ٹوکنز، اور ورچوئل کرنسیز شامل ہیں۔

ERC-20 ٹوکن کا ایسا معیار ہے جس کے ذریعے وہ اثاثے تیار ہو سکتے ہیں جو مشترکہ قواعد پر عمل کریں اور ایک دوسرے کے ساتھ باہم تبدیل (یعنی فنجیبل) ہو سکیں۔ لہذا اگر آپ ERC-20 ٹوکن کے 1,000 یونٹ بناتے ہیں تو ہر یونٹ کی فعالیت یکساں ہو گی۔ 

BEP-20 کا معیار ERC-20 سے بہت حد تک ملتا جلتا ہے۔ تاہم، یہ چیز مدنظر رہے کہ یہ علیحدہ بلاک چین نیٹ ورکس کا حصہ ہیں۔ ERC-20 ٹوکن کے معیار کو Ethereum بلاک چین پر استعمال کیا جاتا ہے، جبکہ BEP-20 Binance اسمارٹ چین (BSC) پر استعمال ہوتا ہے۔

ERC-721

کیا آپ جانتے ہیں کہ Ethereum پر موجود اکثر نان فنجیبل ٹوکنز (NFTs) ایک ہی ٹوکن کا معیار، یعنی ERC-721 شیئر کرتے ہیں؟ چاہے یہ محدود ایڈیشن کا کوئی NFT ہو یا حاضری کے ثبوت کا پروٹوکول (POAP)، آپ کا NFT ممکنہ طور پر ایک ہی بلیو پرنٹ کے ساتھ بنایا گیا تھا۔ تو وہ کیا چیز ہے جو NFTs کو منفرد بناتی ہے؟ ایک رہنما اصول کے مطابق، ERC-721 ٹوکن بننے کے لیے، اثاثے پر لازم ہے کہ اس کی tokenId عالمی سطح پر منفرد ہو۔

ERC-721 کے افعال میں ٹوکن ٹرانسفر، موجودہ بیلنس، کُل سپلائی، اور جیسا کہ ذکر کیا گیا ہے، عالمی سطح پر منفرد ہونا شامل ہیں۔

ERC-1155

چونکہ ٹوکن کے معیارات ارتقاء پذیر ہیں، اس لیے ایک رہنما اصول میں انڈسٹری کی ضرورت کو پورا کرنے کے لیے ٹوکن کی متعدد اقسام کو فروغ دینا بھی شامل ہے۔ ERC-1155 ایک ایسا کثیر جہتی ٹوکن معیار ہے جو مختلف قسم کے ڈیجیٹل اثاثے بنانے کا موقع دیتا ہے، جن میں BNB اور NFTs جیسے سہولتی ٹوکنز شامل ہیں۔

دیگر فیچرز کے علاوہ، ERC-1155 ٹوکن بیچ کے مختلف افعال پیش کرتا ہے، جن میں درج ذیل شامل ہیں:

  1. بیچ ٹرانسفر: جہاں متعدد اثاثے ایک ساتھ ٹرانسفر ہو سکتے ہیں۔

  2. بیچ بیلنس: جہاں ایک ہی مرحلے میں متعدد اثاثوں کے بیلنس کو بازیافت کیا جا سکتا ہے۔

  3. بیچ کی منظوری: جہاں کسی ایڈریس پر تمام ٹوکنز منظور ہو سکتے ہیں۔

  4. NFT معاونت: جہاں اگر کسی ٹوکن کی سپلائی صرف 1 ہو تو اسے NFT سمجھا جاتا ہے۔

ٹوکن کے معیارات کے کمزور پہلو

اگرچہ ایک جیسے معیارات کے ساتھ بنائے گئے ٹوکنز بنیادی افعال پر مطابقت پذیر ہوتے ہیں اور ایک دوسرے کے ساتھ اچھی طرح سے تعامل کر سکتے ہیں، لیکن مختلف معیارات کے حامل ٹوکنز ممکنہ طور پر ایسا نہیں کر سکتے۔ چونکہ انڈسٹری میں موجود ٹوکن کے معیارات کو چلانے والے اصول مختلف ہیں، اس میں کوئی تعجب کی بات نہیں ہے کہ وہ ہمیشہ ایک دوسرے کے ساتھ مطابقت پذیر نہیں ہوتے۔ اس کا مطلب یہ ہو سکتا ہے کہ مختلف معیارات کا استعمال کرتے ہوئے تیار کردہ ٹوکنز ایک ہی پلیٹ فارم پر موجود نہیں ہو سکتے ہیں، یا یہ کہ وہ ایک دوسرے کے ساتھ مواصلت یا ٹریڈ نہیں کر سکتے۔ اگر آپ متعدد کرپٹو کرنسیز کے مالک ہیں، تو ہو سکتا ہے آپ نے اس وقت پریشانی کا سامنا کیا ہو جب آپ اپنے BTC کو Ethereum پر استعمال نہیں کر سکتے۔ اس نقص کو دور کرنے کے لیے، انڈسٹری نے ٹوکنز کی ایک نئی قسم بنائی ہے جو نمائندہ ٹوکنز کہلاتے ہیں۔

نمائندہ ٹوکنز

نمائندہ ٹوکنز ایسی کرپٹو کرنسیز ہیں جو کسی اور اثاثے کی مالیت کے ساتھ پیگ کردہ ہوتا ہے۔ عام طور پر، اصل اثاثے کو ایک ریپر نامی ڈیجیٹل والٹ میں رکھا جاتا ہے، اور اس کا ایک نمائندہ ورژن اوتار جیسی ایک اور بلاک چین پر بنایا جاتا ہے۔

اختتامی خیالات

ٹوکن کے معیارات ایسے ملتے جلتے بلیو پرنٹس ہیں جو بلاک چین پر مبنی ٹوکنز کو ڈیزائن اور شروع کرنے کے لیے استعمال ہوتے ہیں۔ آج انڈسٹری میں متعدد ٹوکن کے معیارات موجود ہیں، اور بلاک چین برجز اور ریپنگ کے میکانزمز جیسے حل ان ٹوکنز کے درمیان عدم مطابقت پذیری کے مسائل کو حل کرنے میں مدد دے سکتے ہیں۔

مزید مطالعہ