Ripple(XRP) کیا ہوتا ہے؟
امواد کا جدول
اختتامی خیالات
ہوم
آرٹیکلز
Ripple(XRP) کیا ہوتا ہے؟

Ripple(XRP) کیا ہوتا ہے؟

جدید
شائع کردہ Dec 24, 2018اپڈیٹ کردہ Feb 9, 2023
5m

Ripple، جو پہلے OpenCoin کے نام سے جانا جاتا تھا، وہ ایک ایسی نجی کمپنی ہے جو منقسم لیجر ڈیٹا بیس (XRP لیجر) کےعلاوہ ادائیگی اور ایکسچینج نیٹ ورک (RippleNet) تشکیل کر رہی ہے۔ Ripple کا بنیادی ہدف بینکس، ادائیگی کے فراہم کنندگان اور ڈیجیٹل اثاثے کی ایکسچینجز کو مربوط کرنا ہے، تاکہ نسبتاً تیز رفتار اور کم لاگت پر مبنی عالمی ادائیگیوں کو فعال کیا جائے۔ 


ہسٹری

Ripple کا تصور 2004 میں پہلی بار Ryan Fugger نے پیش کیا، جنہوں نے غیر مرکزی ڈیجیٹل مالیاتی سسٹم (RipplePay) کی حیثیت سے Ripple کا ابتدائی نمونہ تیار کیا۔ سسٹم 2005 میں لائیو گیا اور اس کا عزم عالمی نیٹ ورک میں ادائیگی کے محفوظ حل فراہم کرنا تھا۔

2012 میں، Fugger نے پراجیکٹ کو Jed McCaleb اور Chris Larsen کے حوالے کیا اور دونوں نے مل کر OpenCoin نامی امریکی ٹیکنالوجی کمپنی بنائی۔ اُس مقام سے، Ripple کو ایسے پروٹوکول بنانے کا آغاز ہوا، جس کی توجہ کا مرکز بینکس اور دیگر مالیاتی ادارہ جات کے لیے ادائیگی کے حل فراہم کرنا تھا۔ 2013 میں OpenCoin کا نام تبدیل کر کے Ripple Labs رکھا گیا تھا، جسے بعد ازاں 2015 میں دوبارہ Ripple کا نام دیا گیا۔

https://www.binance.com/en/buy-sell-crypto?channel=hzBankcard&fiat=USD&utm_source=BinanceAcademy


XRP لیجر (XRPL)

Fugger کے کام اور Bitcoin کی تخلیق سے متاثر ہونے کی بنیاد پر، 2012 میں Ripple نے Ripple مفاہمتی لیجر (RCL) - کو اس کی مقامی کرپٹو کرنسی XRP کے ساتھ تعینات کیا۔ بعد میں، RCL کو XRP لیجر (XRPL) کا نام دیا گیا۔

XRPL ایک منقسم معاشی سسٹم کے طور پر کام کرتا ہے، جو نہ صرف نیٹ ورک کے شرکاء کی تمام مالیاتی معلومات کو اسٹور کرتا ہے بلکہ کرنسی کے متعدد جوڑوں کے لیے ایکسچینج سروسز بھی فراہم کرتا ہے۔ Ripple، ایک اوپن سورس منقسم لیجر کے طور پر XRPL کی پیشکش کرتا ہے، جو اصل وقت میں مالیاتی ٹرانزیکشنز کرنے کی اجازت دیتا ہے۔ نیٹ ورک کے شرکاء ایک مفاہمتی میکانزم کے ذریعے ان ٹرانزیکشنز کی حفاظت اور توثیق کرتے ہیں۔ 

تاہم، Bitcoin کی بجائے XRP لیجر کسی پروف آف ورک کے مفاہمتی الگورتھم پر مشتمل نہیں ہوتا، اور اس لیے ٹرانزیکشنز کی توثیق کرنے کے لیے مائننگ کے عمل پر انحصار نہیں کرتا۔ درحقیقت، نیٹ ورک معاہدے تک پہنچنے کے لیے اپنی مرضی کے مطابق بنائے گئے ذاتی مفاہمتی الگورتھم کا استعمال کرتا ہے – جو پہلے Ripple پروٹوکول کے مفاہمتی الگورتھم (RPCA) کے نام سے جانا جاتا تھا۔

XRPL کی نظم کاری خودمختار تصدیقی نوڈز کے نیٹ ورک کے ذریعے کی جاتی ہے، جو مسلسل اپنے ٹرانزیکشن ریکارڈز کا موازنہ کرتا ہے۔ ہر شخص نہ صرف Ripple کی توثیق کار نوڈ کو سیٹ اپ اور چلا سکتا ہے، بلکہ اس چیز کا انتخاب بھی کر سکتا ہے کہ توثیق کاران کی حیثیت سے کون سی نوڈز لائقِ بھروسہ ہیں۔ تاہم، Ripple اپنے صارفین کو تجویز دیتا ہے کہ وہ اپنی ٹرانزیکشنز کی توثیق کرنے کے لیے جانے پہچانے، قابل اعتماد شرکاء کی فہرست استعمال کریں۔ یہ فہرست نوڈ کی منفرد فہرست (UNL) کے طور پر پہچانی جاتی ہے۔

UNL نوڈز ایک دوسرے کے ساتھ اُس وقت تک ٹرانزیکشن ڈیٹا ایکسچینج کرتی ہیں، جب تک وہ تمام لیجر کی موجودہ حالت پر متفق نہ ہو جائیں۔ دیگر الفاظ میں، وہ ٹرانزیکشنز جن پر UNL نوڈز کی کثیر اکثریت رضامند ہوتی ہے، انہیں مجاز تصور کیا جاتا ہے اور ان تمام نوڈز کے لیجر پر ٹرانزیکشنز کے ایک جیسے سیٹ کے لاگو کرنے پر مفاہمت حاصل ہوتی ہے۔

Ripple کی آفیشل ویب سائٹ کے مطابق، Ripple ایک ایسی نجی کمپنی ہے جس نے XRPL کی ترقی کو اوپن سورس منقسم لیجر کے طور پر قائم کیا۔ یعنی، ہر فرد کوڈ میں اپنا کردار ادا کر سکتا ہے اور کمپنی کے معطل ہونے کی صورت میں بھی XRPL کام کرنا جاری کر سکتا ہے۔


RippleNet

XRPL کے برعکس، RippleNet صرف Ripple کمپنی کے لیے مخصوص ہے اور اسے XRPL میں ادائیگی اور ایکسچینج نیٹ ورک کے طور پر بنایا گیا تھا۔

فی الوقت، RippleNet 3 پراڈکٹ پر مشتمل مجموعے کی پیشکش کرتا ہے، جسے بینکس اور دیگر مالیاتی ادارہ جات کے لیے ادائیگی کے حل والے سسٹم کے طور پر تشکیل کیا گیا ہے۔ فی الوقت، RippleNet کی تین مرکزی پراڈکٹس ہیں: xRapid، xCurrent، اور xVia۔


xRapid

مختصراً، xRapid لیکویڈیٹی کا ایک ایسا مطلوب حل ہے، جو XRP کو متعدد فیاٹ کرنسیز کے مابین عالمی برج کی کرنسی کے طور پر استعمال کرتا ہے۔ XRP اور xRapid دونوں XRP لیجر پر انحصار کرتے ہیں، جو روایتی طریقہ کار کے مقابلے میں تصدیق کے تیز اوقات اور کافی کم فیس کو فعال کرتا ہے۔

آئیے ایک مثال دیکھتے ہیں۔ آسٹریلیا سے Bob، انڈیا میں مقیم Alice کو $100 بھیجنا چاہتا ہے۔ Bob نے FIN نامی مالیاتی ادارے کے ذریعے رقم ٹرانسفر کی۔ ٹرانزیکشن پر عمل درآمد کرنے کے لیے، FIN xRapid حل استعمال کرتا ہے، تاکہ اصل اور ہدفی ملک دونوں میں اثاثے کی ایکسچینجز کے ساتھ رابطہ تخلیق کیا جا سکے۔ اس طرح، کمپنی Bob کے $100 کو XRP میں تبدیل کرنے کی اہل ہے، جو حتمی ادائیگی کے لیے درکار لیکویڈیٹی فراہم کرتی ہے۔ چند سیکنڈ میں، XRP انڈین روپے میں تبدیل ہو گیا اور Alice انڈیا میں موجود اثاثے کی ایکسچینج سے رقم نکلوانے کی اہل ہے۔


xCurrent

xCurrent تشکیل کردہ ایک ایسا حل ہے، جو RippleNet ممبران کے مابین فوری تصفیے فراہم کرتا ہے اور سرحد پار ادائیگیوں کو ٹریک کرتا ہے۔ xRapid کے برعکس، xCurrent کا حل XRP لیجر پر منحصر نہیں ہوتا اور بطور ڈیفالٹ XRP کرپٹو کرنسی استعمال نہیں کرتا۔ xCurrent کو Interledger پروٹوکول (ILP) کی بنیاد پر تیار کیا گیا ہے، جسے Ripple نے ایک پروٹوکول کے طور پر تشکیل کیا تھا، تاکہ مختلف لیجرز یا ادائیگی کے نیٹ ورکس کو مربوط کیا جا سکے۔ 


xCurrent کے چار بنیادی عناصر یہ ہیں:

  1. میسنجر - xCurrent کا میسنجر RippleNet کے مربوط شدہ مالیاتی ادارہ جات کے مابین پیئر-ٹو-پیئر مواصلات فراہم کرتا ہے۔ اسے خطرے اور مطابقت پذیری، فیس، FX کی شرحوں، ادائیگی کی تفصیلات اور فنڈز کی ترسیل کے متوقع وقت کے متعلق معلومات کی ایکسچینج کے لیے استعمال کیا جاتا ہے۔

  2. توثیق کار - توثیق کار کو کسی ٹرانزیکشن کی کامیابی یا ناکامی کی کرپٹوگرافیکل طور پر تصدیق کرنے اور Interledger کے مابین فنڈز کی حرکت میں ربط پیدا کرنے کے لیے استعمال کیا جاتا ہے۔ مالیاتی ادارہ جات اپنا ذاتی توثیق کار استعمال کر سکتے ہیں یا فریق ثالث کے توثیق کار پر اعتماد کر سکتے ہیں۔

  3. ILP لیجر - Interledger پروٹوکول کو بینکنگ کے اُن موجودہ لیجرز میں نافذ کیا جاتا ہے، جو ILP لیجر کو تخلیق کرتے ہیں۔ ILP لیجر ذیلی لیجر کے طور پر فنکشن کرتا ہے اور ٹرانزیکشن کرنے والے فریقین کے مابین کریڈٹس، ڈیبٹس، اور لیکویڈیٹی ٹریک کرنے کے لیے استعمال کیا جاتا ہے۔ فنڈز کا ناقابل تغیر طور پر تصفیہ کیا جاتا ہے، یعنی یا تو ان کا فوری طور پر تصفیہ کیا جاتا ہے یا ہرگز نہیں کیا جاتا۔

  4. FX ٹِکر - FX ٹِکر کو ٹرانزیکشن کرنے والے فریقین کے مابین ایکسچینج کی شرحیں واضح کرنے کے لیے استعمال کیا جاتا ہے۔ یہ تشکیل شدہ ILP کے ہر لیجر کی موجودہ حالت کو ٹریک کرتا ہے۔

اگرچہ xCurrent کو بنیادی طور پر فیاٹ کرنسیز کے لیے تشکیل کیا گیا ہے، یہ کرپٹو کرنسی ٹرانزیکشنز کی بھی معاونت کرتا ہے۔


xVia

xVia ایک API پر مبنی معیاری انٹرفیس ہے، جو بینکس اور دیگر مالیاتی سروس فراہم کنندگان کو ادائیگی کے نیٹ ورک کی متعدد تعاملات پر اعتماد کیے بنا - واحد فریم ورک کے اندر تعامل کرنے کی اجازت دیتا ہے۔ xVia بینکس کو بینکنگ کے دیگر شراکت داروں کے ذریعے ادائیگیاں تخلیق کرنے کی اجازت دیتا ہے، جو RippleNet سے مربوط ہیں اور انہیں ٹرانزیکشنز کے ساتھ انوائسز یا دیگر معلومات منسلک کرنے کے لیے فعال کرتا ہے۔


اختتامی خیالات

جیسا کہ Bitcoin کو پہلی کرپٹو کرنسی اور Ethereum کو اسمارٹ معاہدہ جات کے لیے پلیٹ فارم تخلیق کرنے کے باعث جانا جاتا ہے، ہم Ripple نیٹ ورک کو کرنسی ایکسچینج سسٹم کے طور پر سمجھ سکتے ہیں، جو بینکس اور دیگر مالیاتی ادارہ جات کے لیے ادائیگی کے عالمی حل پر توجہ مرکوز رکھتا ہے۔

RippleNet کو ادائیگی کے روایتی سسٹم کو موثر اور بہتر کرنے کے لیے، بینکنگ کے موجودہ انفراسٹرکچرکے علاوہ نافذ کیا جا سکتا ہے۔ xCurrent مالیاتی ادارہ جات کے مابین لاگت میں موثر اصل وقت کی ادائیگیوں کی اجازت دیتا ہے، xRapid مطلوبہ لیکویڈیٹی پولز فراہم کرنے کے لیے XRP کو سرحد سے مبرا برج کرنسی کے طور پر استعمال کرتا ہے، اور xVia RippleNet کے تمام شرکاء کے انضمام اور مواصلات کی سہولت کاری کرتا ہے۔

مزید مواد کے لیے جڑے رہیں اور Binance اکیڈمی پر ہماری دیگر ویڈیوز کو چیک کرنا مت بھولیں!